اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)لاہور کی حافظ قرآن آمنہ کے لیے زندگی یوں بھی گلزار نہ تھی لیکن والدین کے انتقال کے بعد اس کے ناتواں کاندھوں پر گھر کی بھاری ذمہ داری بھی آن پڑی۔3 بہن بھائیوں میں سب سے بڑی آمنہ نے مجبوراً سڑک کنارے فوڈ اسٹال لگا لیا اور جیسے تیسے زندگی کی گاڑی چلانے لگی۔نجی ٹی وی اے آروائی کو دیے گئے انٹرو یو آمنہ کا کہنا ہے کہ اس اسٹال سے زندگی کی ضروریات تو پوری ہوجاتی ہیں، لیکن گھر کا کرایہ

دینا بے حد مشکل ہے۔پڑھنے اور کھیلنے کی عمر میں کڑی مشقت کرتی آمنہ کی آنکھوں میں بے شمار خواب سجے ہیں، وہ حافظ قرآن ہے اور عالمہ بننا چاہتی ہے، علاوہ ازیں تیسری کلاس میں منقطع ہوجانے والا اپنا تعلیمی سلسلہ بھی دوبارہ جوڑنا چاہتی ہے۔آمنہ کا یقین ہے کہ اگر کسی شخص کو محنت کرنے کی عادت ہو تو زندگی کی مشکلات اس کی راہ کی رکاوٹ نہیں بن سکتیں، جلد اس کی محنت رنگ لائے گی اور اس کی زندگی کا سفر آسان ہوجائے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں