ایک ایسے شخص سے ملوانے جا رہے ہیں جس کی لاہور سے لے کر ایران تک ہر شہر میں ایک بیوی ہے، آئیے جانتے ہیں۔اس شخص کا نام یاسر ہے اور یہ بلوچستان گوادر کا رہنے والا ہے مگر یہ بات اس نے جیونی کے ساحل پر کہی۔ اس وقت یہ پریشان آحل اپنی کشتی میں بیٹھا ہوا تھا تو اس سے اینکر نے سوال کیا کہ آپ کا دماغ تو ٹھیک ہے سمندر پاس ہے پھر بھی کشتی کنارے پر لگا کر اس میں بیٹھے ہیں سمندر میں کیں نہیں جاتے۔ تو یاسر صاحب کہتے ہیں سکون کیلئے بیٹھا ہوں کیونکہ میری 7 بیویاں ہیں تو گھر میں تو سکون مل نہیں سکتا، ہر شہر میں بیوی ہے جیسا کہ ایران، لاہور، فیصل آبا، کوئٹہ اور اسلام آباد وغیرہ وغیرہ۔ جس پر حیرانی سے پوچھا گیا کہ آپ کرتے کیا ہیں جو 7 بیویوں کے خرچے اٹھا لیتے ہیں جس کے جواب میں یہ شخص کہتا ہے کہ میں نے کیا کرنا ہے میں ماہی گیر ہوں بس مچھلیاں پکڑتا ہوں اور روزگار چلاتا ہوں۔ اتنی ساری شادیاں کرنے کی جب وجہ پوچھی گئی تو کہا جب میں پیدا ہوا تو ڈاکٹر نے میری والدہ کو کہا یہ چاند سا بیٹا پیدا ہوا ہے، دیکھنا یہ تو 7 شادیاں کرے گا، اس بات کو لیکر میری والدہ مجھے ایک پنڈت کے پاس لے گئی۔ تو اس نے کہا یہ 40 شادیاں کرے گا اور پھر مولوی صاحب کے پاس لے گئی تو انہوں نے کہا کہ یہ پوری 50 شادیاں کرے گا۔ مزید یہ کہ اب تو بس یہی خواہش ہے کہ 50 شادیاں پوری ہو جائیں کیونکہ والدہ کی خواہش پوری کرنی ہے ڈاکٹر کی تو پیشن گوئی سچ ہو گئی میں نے 7 شادیاں کر لیں اور اب 7 ہی بچے بھی ہیں۔ ویسے تو یہ آدمی دکھ میں مبتلا تھا لیکن جب شادیوں کی بات ہوتی تو یہ خوش ہو جاتا اور کہتا کہ جس بھی شہر میں جاتا ہوں ایک شادی کر لیتا ہوں۔ اتنی ساری شادیاں تو کر لیں لیکن جب ان سے پوچھا گیا کہ آپ کو کون سی بیوی سب سے زیادہ پسند ہے تو کہتے ہیں کہ ایران والی اور اس سے میرے 2 بچے ہیں لیکن جس سے میں بھی تھوڑا ڈرتا ہوں وہ ہے لاہور والی کیوں کہ وہ بہت تیز ہے۔ مگر اچھے اچھے کھانے بھی وہی بنا کر کھلاتی ہے اور دہان بھی زیادہ رکھتی ہے ہاں کوئٹہ والی شریف بہت ہے۔ لیکن یہ بھی دیکھتا ہوں کہ ان کا باپ امیر ہو کیونکہ انہیں شادی کے بعد بھی وہی پالے گا نا کیونکہ میں کہاں سے اتنا پیسہ لاؤں جو انکی ڈھیر ساری خواہشیں پوری کروں۔ یہی نہیں اس شادیاں کرنے والے نوجوان کا کہنا ہے کہ میں تو ہر بیوی کو شادی کے بعد بتاتا ہوں کہ میں نے پہلے سے اتنی شادیاں کر رکھی ہیں۔ پہلے اس لیے نہیں بتاتا کہیں بھاگ نہ جائیں کیونکہ پہلے ہی 2 بھاگ چکی ہیں اور شادی بیاہ پر بھی کوئی زیادہ خرچہ نہیں کرتا بس نکاح کرتا ہوں اور پھر والدین کو بتا دیتا ہوں کہ ولیمہ ہے تو آپ لوگ آجاؤ، جس پر والدہ بہت خوش ہوتی

اپنا تبصرہ بھیجیں