لاڑکانہ(مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے لاڑکانہ میں اپنی دسویں جماعت کی طالبہ کے ساتھ شادی کرنے پر ایک ٹیچر کو معطل کر دیا۔ نجی ٹی وی چینل کے مطابق اس ٹیچر کی شناخت غلام قادر سولنگی کے نام سے ہوئی ہے جس نے

اپنی سویرا مسان نامی طالبہ کے ساتھ اس کے والدین کی مرضی کے خلاف کورٹ میرج کی۔سویرا مسان کے والدین کی طرف سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ یہ شادی ان کی بیٹی کی مرضی کے بھی خلاف ہوئی ہے، ان کا کہنا ہے کہ غلام قادر سولنگی نے ان کی بیٹی کو اغواءکرکے اس کے ساتھ زبردستی شادی کی ہے۔ محکمہ تعلیم سندھ نے شکایت موصول ہونے پر غلام قادر سولنگی کو معطل کر دیا ہے اور اس کے خلاف انکوائری شروع کر دی گئی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں