پارٹی کا انعقاد نہ کرنے پر شوہر اپنی بیوی سے ناراض ہو کر ملک سے ہی فرار ہو گیا۔ ڈیلی سٹار کے مطابق ماؤ اور اس کی اہلیہ اینی کی شادی کو 23سال گزر چکے ہیں۔ گزشتہ دنوں ماؤ کی سالگرہ تھی جس پر اس نے خواہش ظاہر کی تھی۔

کہ اس کی بیوی ایک ایسی شرمناک پارٹی کا انعقاد کرے۔ اینی اس پر رضامند ہو گئی تاہم جب اس نے چند دن بعد ماؤ کو اس شرمناک پارٹی کے متعلق اپنی منصوبہ بندی بتائی تو وہ مطمئن نہیں ہوا اور اس میں کچھ تبدیلیاں کرنے کو کہا، تاہم جب اینی نے تبدیلیاں کرنے سے انکار کر دیا تو وہ ملک سے فرار ہو کر اٹلی چلا گیا۔ رپورٹ کے مطابق ماؤ اور اینی گزشتہ سال بی بی سی کے پروگرام ’کپلز تھراپی‘ میں شریک ہوئے تھے۔ اس شومیں ایسے میاں بیوی شریک ہوتے ہیں جن کی شادی ٹوٹنے والی ہو اور وہاں ان کی کونسلنگ کی جاتی ہے۔ ماؤ نے اپنے فرار کے اس واقعے کے متعلق بتایا ہے کہ وہ اس پارٹی کے متعلق اپنی بیوی کی منصوبہ بندی سے بہت مایوس ہوا تھا جس پر اس نے سالگرہ نہ منانے کا فیصلہ کیا اور اٹلی چلا گیا۔ دوسری جانب بھارتی ریاست اتر پردیش میں ایک سیاسی لیڈر الیکشن کیلئے پارٹی ٹکٹ نہ ملنے پر میڈیا کے سامنے رو پڑا۔ خبر ایجنسی اے این آئی کے مطابق بہوجن سماج وادی پارٹی کے رہنما ارشد رانا پارٹی ٹکٹ نہ ملنے پر سخت دل گرفتہ ہوگئے اور میڈیا کے سامنے اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ پائے۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ پارٹی نے ان سے ٹکٹ کیلئے 50 لاکھ روپے مانگے تتھ

اپنا تبصرہ بھیجیں