لاہور(ویب ڈیسک) پروٹین کے بہترین ذرائع میں سے ایک مچھلی ہے۔ یہ اومیگا3 چکنے ترشے (فیٹی ایسڈز) جیسے بنیادی غذائی اجزا سے بھرپور ہے۔ جسم کو دبلا پتلا رکھنے اور پٹھوں کو مضبوط بنانے کے لیے مچھلی کی پروٹین بہترین ہے۔ مچھلی سے صرف پیٹ کم نہیں ہوتا بلکہ جسم کے

 

 

 

افعال بھی بہتر ہوتے ہیں۔ یہ جگر، دماغ اور نیند کےلیے مفید ہے۔ اس لیے اپنی خوراک میں مچھلی کو ضرور شامل کریں تاکہ مندرجہ ذیل فوائد حاصل کر سکیں۔امراضِ قلب میں کمی: ’’امریکن جرنل آف کارڈیالوجی‘‘ میں شائع ہونے والے ایک جائزے کے مطابق مچھلی کھانے سے دل کی مہلک بیماریوں اور شریانوں کے بند ہونے کا امکان گھٹ جاتا ہے۔ مچھلی میں دل کے لیے مفید اومیگا3 چکنے ترشے ہوتے ہیں جو سوزش کو کم

 

 

 

کرنے، دل کی حفاظت کرنے اور دیرینہ امراض سے بچانے میں مددگار ہیں۔ الزائمر سے بچاؤ: مچھلی دماغ کے لیے بھی ضروری غذا ہے۔ ’’جرنل آف دی امریکن میڈیکل ایسوسی ایشن‘‘ میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق سمندری غذا کا معتدل استعمال الزائمر کی بیماری کے خطرے کو کم کرتا ہے۔ تحقیق سے معلوم ہوا کہ باقاعدگی سے مچھلی کھانے والوں کے دماغ میں خاکستری مواد (گرے میٹر) زیادہ ہوتا ہے جو دماغ کے

 

 

 

سکڑاؤ اور انحطاط، جس کا نتیجہ دماغ کے افعال میں پیچیدگی کی صورت نکل سکتا ہے، کو کم کرتا ہے۔ اس میں اگرچہ یہ نکتہ بھی اٹھایا گیا کہ اس سے دماغ میں پارے کی مقدار بڑھ جاتی ہے لیکن اس کا اثر دماغی اعصاب پر نہیں پڑتا۔سمندری غذا دماغی صحت کے لیے حیران کن فوائد کی حامل ہے۔ یاسیت کی علامات میں کمی: ’’دی جرنل آف سائیکاٹری اینڈ نیوروسائنس‘‘ نے یہ نتیجہ نکالا ہے کہ افسردگی دور کرنے والی

 

 

 

دواؤں ’’سلیکٹو ریوپٹیک انہیبیٹر‘‘ (SSRI) کے ساتھ مچھلی کے تیل کا استعمال یاسیت کی علامات میں زیادہ کمی لاتا ہے۔ یہ اطلاعات بھی ہیں کہ صرف مچھلیکے تیل ہی سے یاسیت کی علامات کم ہو جاتی ہیں، تاہم اس بارے میںمزیدشواہد کی ضرورت ہے۔وٹامن ڈی کا شاندار ذریعہ: ’’دی نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ (امریکا) کے مطابق مچھلی میں وٹامن ڈی کی مقدار زیادہ ہوتی ہے اور یہ بنیادی غذائی اجزا کا بہت اچھا

 

 

 

ذریعہ تصور ہوتی ہے۔ انسٹی ٹیوٹ کے مطابق وٹامن ڈی کیلشیم کے انجذاب کے لیے مفید ہے جس سے ہڈیوں کی صحت اور نمو میں اضافہ ہوتا ہے۔ نظر میں بہتری: ’’ایجنسی فار ہیلتھ کیئر ریسرچ اینڈ کوالٹی‘‘ (امریکا) کے مطابق اومیگا 3 چکنے ترشے نظر اور آنکھوں کی صحت کے لیے مفید ہیں۔ اس کا سبب دماغ اور آنکھوں میں ان ترشوں کا زیادہ ارتکاز ہے۔ اچھی نیند: اگر آپ کو تاخیر سے نیند آنے یا بری نیند کا مسئلہ درپیش

 

 

 

ہے تو مچھلی کا استعمال ایک اچھا ٹوٹکا ہو گا۔’’دی جرنل آف کلینکل سلیپ میڈیسن‘‘ میں شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق مچھلی کھانے میں اضافے سے زیادہ تر افراد کی نیند کا معیار بہتر ہوا۔ محققین کا خیال ہے کہ مچھلی میں وٹامن ڈی کی زیادہ مقدار سونے میں مدد گار ہے۔ کم مہاسے: مچھلی جِلد کو بہتر بناتی ہے اور مہاسوں میں مفید ہے۔ ’’بائیو میڈ سنٹرل‘‘ میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق مہاسوں سے جِلد

 

 

 

کو پاک کرنے میں مچھلی کا تیل فائدہ مند ہے۔ جوڑوں کے لیے مفید: اگر آپ کو جوڑوں کی دیرینہ سوزش کا مرض گنٹھیا نما وجع الفاصل (rheumatoid arthritis) ہے۔تو سوجن اور درد میں کمی کے لیے زیادہ مچھلی کھانا مفید ہو گا۔’’امریکن کالج آف ریوماٹولوجی‘‘ کے مطابق مچھلی کھانے

 

 

 

 

 

اپنا تبصرہ بھیجیں