اسلام آباد(نیوز ڈیسک)کہتے ہیں کہ ضرورت ایجاد کی ماں ہیں اور جب انسان کو مجبوری کی حالت میں کوئی مشکل پیش آ جائے تو وہ کوئی نہ کوئی جگاڑ لگا ہی لیتا ہے چاہے وہ غلط طریقہ ہو یا درست، سوشمل میڈیا پر شیئر کی ہوئی ایک تصویر تیزی سے وائرل ہو رہی ہے۔

اس تصویر میں ایک نوجوان کو دکھایا گیا ہے، جس نے اپنی گود میں ایک بلی کو پکڑا ہوا ہے۔ نوجوان نے جس بلی کو پکڑا ہوا ہے اس نے زرق برق لباس بھی پہن رکھا ہے۔تصویر کی تفصیل میں لکھا ہے کہ میرا بھائی سکول میں پروم کے لیے اپنی بلی کو لے گیا، اسے اس موقع کے لیے کوئی لڑکی یا کوئی اور نہیں ملا تھا۔ اس تصویر کو اب تک ایک ملین سے زیادہ افراد دیکھ چکے ہیں۔ دوسری جانب23 سالہ سو مو مو نائنگ کا تعلق میانمار سے ہے۔ پچھلے کچھ دنوں نے اپنی انتہائی دبلی پتلی کمر کے باعث انہیں انٹرنیٹ پر کافی شہرت ملی ہے۔ برمی طالبہ کا دعویٰ ہے کہ اُن کی کمر کا سائز صرف 13.7 انچ ہے۔یعنی وہ دنیا کی سب سے پتلی خواتین میں سے ایک ہیں۔ سو مو مو نائنگ کا دعویٰ ہے کہ اُن کی کمر کا پتلا ہونے کی وجہ جنیاتی ہے۔ بہت سے صارفین اُن پر الزام لگاتے ہیں کہ اُن کی پتلی کمر فوٹو شاپ کا کمال ہیں جبکہ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے اپنی چند پسلیاں نکلوا دی ہیں یا وہ مستقل سخت اور پتلا شکم بند استعمال کرتی ہیں۔ تاہم اُن کا کہنا ہے کہ یہ سب قدرتی ہے۔ گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے مطابق اس وقت دنیا میں سب سے پتلی کمر ایتھل گرانجر کی ہے جو صرف 13 انچ کی ہے۔وینیزویلا کی ایک ماڈل الیرا اونڈانو نے روز 23 گھنٹے شکم بند پہن کر اپنی کمر 20انچ کی ہے۔ سو مو مو نائنگ کی 13.7 انچ کمر کے بارے میں اُن کا اصرار ہے کہ یہ قدرتی ہے۔میل آن لائن کا کہنا ہے کہ سو مو مو نائنگ کی کمر کی پیمائش کی تصدیق آزاد ذرائع سے نہیں ہو سکی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں