ایک خواب کی بڑی عجیب تابیر حضرت ابو خلدا ؓ ایک مر تبہ حضرت ابنِ سید ؒ کے پاس بیٹھے ہوئے تھے ان کے پاس ایک شخص آتا ہے اور آ کر کہتا ہے کہ حضرت میرے آستین سے چڑیاں نکلتی ہیں۔

تو پھر میں ایک ایک چڑیا کو پکڑتا ہوں ذ ب ح کر تا ہوں اور کنویں میں ڈال دیتا ہوں ۔ پھر پکڑتا ہوں ذب ح کر تا ہوں کنویں میں ڈال دیتا ہوں حضرت ابنِ سریر آپ کو سب کو پتہ ہے کہ ابنِ سریر خواب کی تابیر کے امام سمجھے جا تے ہیں

اللہ نے انہیں بڑی بہاریں دے رکھی تھیں اور ان کی ایک کتاب ہے تو ان کے بارےمیں آتا ہے اس شخص نے پو چھا کہ آپ کا گھر کہاں پر ہے۔ اس نے کہا میرا فلاں جگہ پر گھر ہے فلاں علاقے میں ہے فلاں جگہ پر گھر ہے۔

آپ ٹھہرو میں ابھی آتا ہوں حضرت سریر ؒ اس وقت کے بادشاہ کے پاس گئے اور فلاں شخص ہے وہ لوگوں کو ق ت ل کرنے کے در پر ہے وہ بادشاہ حضرت ابنِ سریر ؒ کے ساتھ آ ئے

اور ان کے گھر گئے اس شخص کے گھر میں جا کر دیکھا کہ کنویں کے قریب پچاس سے زائد لوگ م رے ہوئے تھے وہاں پر۔ وہ دھوکے سے لے کر لوگوں کو آ تا ۔

اور مار کر کنویں میں ڈال دیتا۔ پچاس کے قریب اس نے لوگوں کو اس طرح ق ت ل کیا تھا تو جب گرا گیا تو پچاس لوگ ابنِ سریرؒ نے جب اس خواب کی تابیر بتائی کہ آستین سے چڑیا نکلی ہے اور خواب کی تعبیر کچھ اور بتائی ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں